لکی سیمنٹ کےذیلی ادارے

لکی ہولڈنگز لمیٹڈ

لکی ہولڈنگز لمیٹڈ لکی سیمنٹ لمیٹڈ کی ذیلی کمپنی ہے اور اس کی تشکیل پاکستان میں سن ۲۰۱۲ء میں بحیثیت پبلک لسٹڈ کمپنی محدود از حصص کمپنیز آرڈیننس ۱۹۸۴ء کے تحت ہوئی۔ لکی سیمنٹ کے پاس ایل ایچ ایل کے ۷۵فیصد حصص ہیں۔ جون ۲۰۱۷ء میں ایل ایچ ایل کے پاس آئی سی آئی پاکستان لمیٹڈ کے ۱۶ئ۷۴ فیصد حصص تھے۔ ایل ایچ ایل کے بنیادی ذرائع آمدنی منافع منقسمہ اور رائلٹی ہیں۔

آئی سی آئی پاکستان لمیٹڈ

لکی سیمنٹ نے آئی سی آئی پاکستان لمیٹڈ کو ایل ایچ ایل کے ذریعے سن ۲۰۱۲ء میں حاصل کیا، کمپنی پالیسٹر اسٹیپل فائبر ، پی او آئی چپس، سوڈا ایش، خصوصی کیمیاوی مادے، سوڈیم بائی کاربونیٹ اور پولی یوریتھنز، بیجوں کی مارکیٹنگ، خام و ادھ کچے مال کی تیاری اور دوائیوں کی درآمدات اور جانوروں کی صحت سے متعلق مصنوعات اور عمومی کیمیاوی مادوں کی خرید و فروخت میں مصروف عمل ہے۔ کمپنی بطور درآمدی ایجنٹ اور خام و ادھ کچے مال کی تیاری کی حیثیت سے کام کرتی ہے ۔آئی سی آئی نے دواساز مصنوعات اور نومولود بچوں کے دودھ کے پائوڈ کی پیدوار اور اور فروخت کے کاروبار میں سرمایہ کاری کی ہے۔ آئی سی آئی پاکستان پی ایس ایکس میں درج فہرست ہے۔

ایل سی ایل ہولڈنگز لمیٹڈ

ایل سی ایل ہولڈنگز لمیٹڈ مکمل طور پر لکی سیمنٹ کی ملکیت میں ایک ضمنی کمپنی ہے اور اس کی تشکیل بحیثیت پبلک ان لسٹڈ کمپنی ستمبر ۲۰۱۴ء میں ہوئی جس کے مقاصد کوئلے سے توانائی پیدا کرنے والے پروجیکٹ لکی الیکٹرک پاور کمپنی لمیٹڈ میں سرمایہ کاری کرنا ہے۔ ایل سی ایچ کی ملکیت میںایل ای پی سی ایل کے۱۰۰ فیصد حصص ہیں۔

لکی الیکٹرک پاور کمپنی لمیٹڈ

ایل ای پی سی ایل مکمل طور پر ایل سی ایچ ایس ایل کی ملکیت میں ضمنی کمپنی ہے جس کی تشکیل پاکستان میں سن ۲۰۱۴میں بطور پبلک ان لسٹڈ کمپنی کے ہوئی جس کا مقصد کوئلے سے ۶۶۰میگا واٹ بجلی پیدا کرنے والے انتہائی اہم پروجیکٹ ہے جو قومی وسائل کو بجلی فراہم کرے گا۔

کیا لکی موٹرز پاکستان لمیٹڈ

کیا لکی موٹرز پاکستان لمیٹڈ کی تشکیل پاکستان میں دسمبر ۲۰۱۶ء میں بطور پبلک ان لسٹڈ کمپنی کے ہوئی۔ کمپنی کے کاروباری مقاصد میں کیا موٹرز کارپوریشن جنوبی کوریا (ہونڈائی موٹر گروپ کا ایک حصہ)کے تعاون سے کیا کی گاڑیوں کی پاکستان میں اسمبلی، مارکیٹنگ، تقسیم اور گاڑیوں ، پرزوں اور لوازمات کی فروخت شامل ہے۔ کیا لکی موٹرز پاکستان لمیٹڈ کو وزرات صنعت و پیدوار نے جون ۲۰۱۷ء میں سرسبز سرمایہ کاری کی’’اے‘‘ درجہ بندی سے نوازا ہے اور یہ ملک کی سب پہلی کمپنی ہے جسے آٹوموٹو ڈولپمنٹ پالیسی ۲۰۱۶-۲۰۲۱ء کے تحت اس درجہ بندی سے نوازا گیا ہے ۔

ایل سی ایل انویسٹمنٹ ہولڈنگز لمیٹڈ

ایل سی ایل ہولڈنگز لمیٹڈ کی تشکیل سن ۲۰۱۱میں جمہوریہ ماریشس میں ہوئی جو کہ مکمل طور پر لکی سیمنٹ لمیٹڈ کی ملکیت میں ایک ضمنی کمپنی ہے۔ ایل سی ایل آئی ایچ ایل نے مشترکہ سرمایہ کاری (۵۰:۵۰)کے تحت مقامی شراکت داروں کے ساتھ مل کر جمہوریہ عراق اور جمہوری جمہوریہ کانگو میں سیمنٹ کی پسائی کے یونٹ کے قیام کے معاہدوںکو حتمی شکل دے دی ہے ۔

لکی رائوجی ہولڈنگز لمیٹڈ

لکی رائوجی ہولڈنگز لمیٹڈ کی تشکیل سن ۲۰۱۱ء میں ایک مشترکہ سرمایہ کاری معاہدہ مابین ایل ایچ ایل آئی ایچ ایل اور راسنز انویسٹمنٹ لمیٹڈ( جو کہ کیمن آئی لینڈز میں رجسٹر ہے) ہوئی جس کے تحت ایک مکمل خودمختار سیمنٹ تیار کرنے کا پلانٹ جمہوری جمہوریہ کانگو میں لگایا جائے گا۔ ایل ایچ ایل آئی ایچ ایل کو مذکورہ بالا مشترکہ سرمایہ کاری پروجیکٹ میں ۵۰ فیصد ملکیت حاصل ہے۔

نایومبا یا اکیبا ایس اے

نایومبا یا اکیبا ایس اے کی تشکیل بطور محدود بہ حصص کمپنی جمہوری جمہوریہ کانگو میں ہوئی اور یہ لکی رائوجی ہولڈنگز لمیٹڈ کی مکمل ملکیت میں ضمنی کمپنی ہے۔ این وائی اے نے مکمل طور پر سرسبز سیمنٹ پلانٹ کانگو میں لگایا ہے جو کہ ڈی آر سی کا مرکزی صوبہ ہے ۔ اس پلانٹ کی پیداواری گنجائش ۱۸ئ۱ ملین ٹن سالانہ ہے۔ پلانٹ میں تجارتی پیداوار کا آغاز دسمبر ۲۰۱۶ء میںہوا۔

لکی الشموخ ہولڈنگز لمیٹڈ

لکی الشموخ ہولڈنگز لمیٹڈ کی تشکیل سن ۲۰۱۲ء میں ایل سی ایل آئی ایچ ایل اور الشموخ کنسٹرکشن مٹیریلز ٹریڈنگ ایف زیڈ ای کے مابین مشترکہ سرمایہ کاری معاہدہ کے مطابق ہوئی جس کے تحت سیمنٹ کی پسائی کا ایک یونٹ عراق میں قائم کیا جائے گا۔ ایل سی ایل آئی ایچ ایل کے پاس مذکورہ مشترکہ سرمایہ کاری پروجیکٹ میں ۵۰ فیصد ملکیت ہے۔

المبروکہ سیمنٹ مینوفیکچرنگ کمپنی لمیٹڈ

المبروکہ سیمنٹ مینوفیکچرنگ کمپنی لمیٹڈ کی تشکیل بطورمحدود از واجبات کمپنی بصرہ ، جمہوریہ عراق میں ہوئی اور مکمل طور پر لکی الشموخ ہولڈنگز لمیٹڈ کی ملکیت میں ضمنی کمپنی ہے۔ اے ایم سی ایم سی نے ایک سرسبز سیمنٹ کی پسائی کا یونٹ جس کی پیداواری گنجائش ۸۷۱ئ۰ ملین ٹن ہے ، بصرہ عراق میں قائم کیا ہے جس نے اپنی پیداوار کا آغاز ۲۰۱۴میں کردیا تھا۔ عراق کے ا س یونٹ میں ایک برائون فیلڈ توسیع ۲۰۱۷کی آخری سہ ماہی میں مکمل ہوجائے گی جس سے۸۷۱ء ۰ ملین ٹن سالانہ کی مزید اضافی پیداواری گنجائش حاصل ہوگی۔

TOP